Kashmirs losing data from Whats app

کشمیری واٹس ایپ سے غائب ہو رہے ہیں
کشمیریوں کی ڈیجیٹیل یادوں پر بھی بھارت کا حملہ
کشمیریوں کے وٹس ایپ سے تصاویر، ویڈیوز اور فائلز ختم ہو گئیں
 
سرینگر،5دسمبر(ساؤتھ ایشین وائر )
بدھ کے روز ، کشمیری واٹس ایپ سے غائب ہونا شروع ہوگئے – اور کسی کو قطعی طور پر یقین نہیں تھاکہ اس کی وجہ کیا ہے۔ متنازعہ جغرافیائی علاقے کے شہری ، جن کی خود مختاری ہندوستانی حکومت نے اگست میں منسوخ کردی تھی ، اچانک ان واٹس ایپ گروپوں سے غائب ہونے لگے، جس میں انہوں نے طویل عرصے سے حصہ لیا تھا ۔
فیس بک کے زیر ملکیت واٹس ایپ کو لگ بھگ 400 ملین ہندوستانی استعمال کرتے ہیں ، جس سے یہ ملک دنیا کی سب سے بڑی منڈی بن جاتی ہے۔ساؤتھ ایشین وائر کے مطابق واٹس ایپ گروپس ہندوستان میں آن لائن گفتگو پر حاوی ہیں ، اور اسمارٹ فون تک رسائی حاصل کرنے والے زیادہ تر ہندوستانی چند ایک گروپوں میں شریک ہوتے ہیں۔ لیکن کشمیری عوام ان گروپوں سے بڑے پیمانے پر غائب ہونا شروع ہوگئے ہیں۔
چار مہینے ہوچکے ہیں جب ہندوستان کی حکومت نے کشمیر کی انٹرنیٹ سروس بند کردی تھی ۔اصل میں کشمیری جو اس ہفتے اپنے واٹس ایپ گروپس سے غائب ہوچکے ہیں انہوں نے خود ایسا نہیں کیا۔ اور نہ ہی ان کو معلوم ہے کہ ایسا ہوچکا ہے۔ ساؤتھ ایشین وائر کی رپورٹ کے مطابق اصل میں4 مہینوں کی غیر فعالیت کی وجہ سے کشمیر ی لوگوں کے  واٹس ایپ اکاؤنٹ حذف ہو رہے ہیں۔ 
لندن میں مقیم کشمیری ڈاکٹر مدثر فردوسی جو اپنے دوستوں اور اہل خانہ کے ساتھ نصف درجن واٹس ایپ گروپس میں ہیں ، کہتے ہیں کہ ابتدائی طور پر میں نے سوچا تھا کہ کشمیر میں انٹرنیٹ سروس بحال ہوچکی ہیں اور شاید یہ لوگ خود ہی واٹس ایپ گروپس سے خود کو ہٹا رہے ہیں۔ لیکن مجھے جلدی سے احساس ہوا کہ ایسا نہیں ہے۔
ساؤتھ ایشین وائر کے مطابق ان کشمیریوں کے لئے افسوس اور دکھ کی بات یہ ہے کہ ان چار مہینوں  کے لئے وٹس ایپ سے غائب رہنے کی وجہ سے لوگوں ان کی ڈیجیٹل امپرنٹ کا ایک اہم حصہ تصاویر ، ویڈیوز ، تحریریں اور اٹیچڈ فائلز بھی غائب ہیں۔
ایک تبصرہ میں ، فیس بک کے ترجمان نے کہا ہے کہ وٹس ایپ سے اخراج غیر فعال اکاؤنٹس سے متعلق واٹس ایپ کی پالیسی کا نتیجہ ہے۔ انہوں نے لکھا ، کہ سلامتی کو برقرار رکھنے اور اعداد و شمار کو برقرار رکھنے کے لئے ، عام طور پر واٹس ایپ اکاؤنٹس 120 دن کی غیر فعالیت کے بعد ختم ہوجاتے ہیں۔جب ایسا ہوتا ہے تو ، وہ اکاؤنٹس خود بخود اپنے واٹس ایپ گروپس سے خارج ہوجاتے ہیں۔ انٹرنیٹ تک دوبارہ رسائی حاصل کرنے اور دوبارہ واٹس ایپ میں شامل ہونے پر لوگوں کو دوبارہ گروپس میں شامل کرنے کی ضرورت ہوگی۔
ساؤتھ ایشین وائر کے مطابق فیس بک نے ابھی تک ان سوالوں کا جواب نہیں دیا ہے کہ کتنے کشمیری متاثر ہوئے تھے۔ اور کیا لوگوں کو واٹس ایپ پر دوبارہ رجسٹر کرنا ہوگا اور پلیٹ فارم پر اپنے پروفائلز کو دوبارہ بنانا ہوگا۔

Comments are closed, but trackbacks and pingbacks are open.