مہاتیر بن محمد کے اقوام متحدہ میں خطاب کے بعد سے بھارت ناراض

مہاتیر بن محمد کے اقوام متحدہ میں خطاب کے بعد سے بھارت ناراض
مہاتیر محمد کے خطاب اور ان کی ٹویٹ کے بعد سے بھارت میں ہیش ٹیگ ‘بائیکاٹ ملائیشیا ٹرینڈ کر رہا ہے
ملائیشیا کے کئی شہریوں نے سوشل میڈیا پر ناراض بھارتی سوشل میڈیا صارفین کی ٹوئٹس کو تنقید کا نشانہ بنایا
 کشمیر میں جو ہو رہا ہے وہ کسی بڑے انسانی بحران سے کم نہیں ہے۔سچ بولنے کی وجہ سے ہیش ٹیگ کا آغاز ہوا
نئی دہلی(کے پی آئی) ملائیشیا کے وزیراعظم مہاتیر بن محمد کے اقوام متحدہ میں خطاب کے بعد سے بھارت میں سوشل میڈیا پر ہیش ٹیگ ‘بائیکاٹ ملائیشیا ٹرینڈ کر رہا ہے۔  مہاتیر نے اپنے خطاب میں بھارتی کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا معاملہ اٹھایا تھا۔اقوام متحدہ کے 74 ویں اجلاس سے خطاب کے دوران ملائیشیا کے وزیراعظم مہاتیر بن محمد نے کہا،” جموں و کشمیر کے حوالیسے اقوام متحدہ کی قراردادوں کے باوجود اس پر قبضہ کیا گیا ہے، بھارت کو پاکستان کے ساتھ مل کر اس مسئلے کا حل تلاش کرنا چاہیے۔ مہاتیر کا کہنا تھا،”اقوام متحدہ کو نظر انداز کرنا اقوام متحدہ کے وقار میں کمی کا باعث بنے گا۔ ان کا کہنا تھا،” میانمار میں روہنگیا پر ڈھائے جانے والے مظالم پر دنیا کی بے بسی نے اقوام متحدہ کی قراردادوں کی قدر کم کر دی ۔ جموں و کشمیر پر اقوام متحدہ کی قراردادوں کے باوجود اس پر قبضہ کیا گیا ہے۔مہاتیر محمد کے خطاب کے بعد ان کی ٹویٹ پر بھی کافی بھارتی شہری ناراض ہوئے۔مہاتیر محمد کے خطاب اور ان کی ٹویٹ کے بعد سے بھارت میں ہیش ٹیگ ‘بائیکاٹ ملائیشیا ٹرینڈ کر رہا ہے۔ ٹوئیٹر صارف اور بھارتی تجزیہ کار میجر ریٹائرڈ سورندیرا پونیا نے لکھا،” گزشتہ سال آٹھ لاکھ بھارتی شہریوں نے ملائیشیا کا دورہ کیا تھا، ہمیں اس ملک میں سیاحت کا بائیکاٹ کرنا ہوگا کیوں کہ یہ ملک دہشت گردی میں تعاون کرنے والے پاکستان کی حمایت کر رہا ہے۔۔ملائیشیا کے کئی شہریوں نے سوشل میڈیا پر ناراض بھارتی سوشل میڈیا صارفین کی ٹوئٹس کو تنقید کا نشانہ بنایا۔ ایک ملائیشین شہری کا کہنا تھا،” سچ بولنے کی وجہ سے ‘بائیکاٹ ملائیشیا کے ہیش ٹیگ کا آغاز ہوا۔ کشمیر میں جو ہو رہا ہے وہ کسی بڑے انسانی بحران سے کم نہیں ہے۔
#/S

Comments are closed, but trackbacks and pingbacks are open.